Is Grameen Bank Different? - Page 7

روائتی بینک اس بات پر کو ئی دھیان نہیں دیتے کہ قرض لینے کی صو رت میں قرض لینے والے کے خاندان پر کیا گزر تی ہے جبکہ گرامین بینک اپنے مقروض کے بچوں کی تعلیمی طور پر مانیٹرنگ کر تے رہتے ہیں {گرامین بینک باقاعدگی سے اپنے قرض دار کے بچوں کو تعلیمی وظیفہ اور طالب علم کےلیے قرض فراہم کر تا ہے}اس کے علاوہ گرامین بینک اپنے قرض داروں کی رہائش ،صحت ، صفائی، پینے کے پانی تک رسائی اور ہنگامی صو رتحال میں اپنے قرض دار کی گنجائش کے بارے میں بھی دھیان دیتا ہے۔ گرامین بینک اپنے قرض داروں کی مدد کر تا ہے کہ وہ اپنے لیے پنشن اور بچت کے طریقے اپنا ئیں۔

روائتی بینکوں میں سود وقت کے ساتھ ساتھ بڑھتا رہتا ہے اور سود کے طریقہ کار کو مزید مشکل بنا یا جا تا ہے جبکہ گرامین بنک میں سود کا نظام انتہائی سادہ رکھا جا تا ہے۔

قرض دار کی مو ت کی صو رت میں گرامین بینک قرض دار کے لواحقین سے قرض کی واپسی کا تقاضہ نہیں کر تا ۔ اس بینکاری نظام میں ایک انشو رنش پروگرام تشکیل دیا گیا ہے اور قرض دار کی مو ت کی صو رتحال میں تمام قرض اور سود اسی پرو گرام کے تحت ادا کیا جا تا ہے اور مر نے والے کے خاندان پر کوئی سود لا گو نہیں کیا جاتا۔

گرامین بینک میں ایک فقیر پر بھی خصو سی توجہ دی جاتی ہے۔ فقیروں کو بھی گرامین بینک کے پرو گرام کے تحت بینکاری نظام میں شامل ہو نےکے لیے حو صلہ افزائی کی جاتی ہے بنک فقیر کو وضاحت سے بتا تا ہے کہ کس طرح گھر گھر مانگنے کےلیے جاتے ہوئے تم اپنے ساتھ روز مرہ ضرورت کی اشیاء فروخت کر نےکےلیے لے جا سکتے ہو۔ تا کہ پیسے کما سکو۔ یا اگر کوئی فقیر کسی ایک جگہ پر مخصوص ہو کہ مانگتا ہے تو وہ اپنے ساتھ فروخت کی کچھ چیزیں رکھ سکتاہے گرامین کا خیال یہ ہے کہ فقیر کو بھی اچھی با عزت زندگی کی طرف لا یا جائے بجائے اس کہ کے وہ بھیگ مانگنا جار ی رکھے۔

اس طرح کا کو ئی بھی پرو گرام روائتی بینکوں کے کام کا حصہ نہیں ہو گا۔

گرامین طریقہ کار اپنے قرض لینے والوں کی حو صلہ افزائی کر تا ہے کہ وہ معاشرتی، تعلیمی اور صحت عامہ کے میدان میں اپنے سامنے کچھ مقاصد طے کر لیں اور انہیں "سو لہ فیصلوں" کا نام دیا گیا ہے مثلا {کو ئی جہیز نہیں، بچوں کےلیے تعلیم، سینٹری لیٹرین، درخت اُگانا، بچوںمیں رات کے اندھے پن سے بچنے کےلیے سبزیاں کھانے کی عادت، پینےکےلیے صاف پانی کا انتظام کر نا وغیرہ وغیرہ} روائتی بینک ان کا موں کو اپنے کارو بار کی حیثیت سے اہمیت نہیں دیتے۔

گرامین نظام میں ہم غریب لو گوں کو انسانی "نونسائی" کے طور پر دیکھتے ہیں اگر کسی بہت بڑے درخت کے اچھے سے بیج کو پھولوں والے گملے میں لگا دیا جائے تو اس میں سے اُگنے والا درخت اصل درخت کی چھوٹی مثال {نمونہ} ہو گا اس کی وجہ بیج کی کو ئی خرابی نہیں بلکہ اسکی وجہ یہ ہے کہ اس بیج کو بڑھنے کی اصل سہولیات سے محروم کر دینا ہے۔ لوگ غریب ہیں کیونکہ معاشرہ انہیں معاشرتی اور معا شی طور پر آگے بڑھنےکےلیے اصل بنیاد یں فراہم نہیں کر تا، اُن کو بڑھنے اور پھیلنےکےلیے پھولوں والے گملے دے دیئےگئے ہیں۔ گرامین کی بھر پور کو شش ہے کہ انہیں" پھولوں کے گملے" سے نکال کر معاشرے کی اصل مٹی میں منتقل کر دیا جائے

اگر ہم ایسا کر نے میں کامیاب ہو جائیں تو دنیا میں کوئی انسانی "بونسائی" باقی نہیں رہے گا اور ہمیں غریب سے آزاد دنیا ملے گی۔

ہم غریب کے اس شکنجے کو مائیکرو کریڈٹ کے ذریعے توڑ دیں گے۔

گرامین بینک کی بنیا د رضاکارانہ طور پر پانچ افراد کے گروپ پر ہے جو روائتی بینکو ں کی ضرورت کے مطابق جائیداد یا ملکیت ہو نے کی گارنٹی دیں کہ ہم ایک دو سرے کی اخلاقی اور اقداری مدد کریں گے اور اس چیز کی ضمانت دیتے ہیں کہ پو را گروہ مل کر کام کرے گا۔ شروع میں گروپ کے صرف دو رکن قرض کےلیے درخواست دے سکتے ہیں بعد میں پہلے ارکان کی قرض واپس کر نے کی صلاحیت کو دیکھتے ہو ئے بعد والے دو فرد قرض حاصل کر سکتے ہیں اور اس طرح پھر بانچواں فرد بھی قرض حاصل کر سکتا ہے۔